راجن پور بھرمیں عطائیوں کی بھرمار ، پنجاب ہیلتھ کیئر کمیشن کی خاموشی معنی خیز !!

عطائی ڈاکٹروں اور حکیموں کا راجن پور کے گردونواح میں پریکٹس جاری ، ارباب اختیار دعووں تک محدود اس وقت سینکڑوں کی تعداد میں عطائی حضرات عوام کی جان و مال کے دشمن بنے ہوئے ہیں اور اپنی پریکٹس جاری رکھی ہوئی عطائیت کو ختم کرنے کے لیے بنایا جانے والا محکمہ پنجاب ہیلتھ کیئر کمیشن کا ضلعی دفتر نہ ہونے کی وجہ سے عطائیت نیٹ ورک نے خوب فائدہ اٹھا رکھا ہے، جیسے ہے کوئی اہلکار پنجاب ہیلتھ کیئر کمیشن کی جانب سے کاروائی عمل میں لاتا ہے بقیہ تمام نیٹ ورک کو بذریعہ ٹیلی فون رابطہ ہو جاتا ہے اور وہ اپنی دوکانیں بند کرکے فرار کی راہ لے لیتے ہیں ، راجن پور میں المیہ یہ ہے کہ پنجاب ہیلتھ کئیر کمیشن کا نمائندہ مہینہ میں ایک بار دورہ کرتا ہے تو یہ عطائی مہینہ میں ایک دن اپنی دوکانیں بند کرتے ہیں بقیہ 29 دن دھڑلے سے کھولے رکھتے ہیں ،
ذرائع کیمطابق ان عطائیوں کا نیٹ ورک زیادہ تر سرکاری ملازمین پر بھی مشتمل ہے جونہی ہیلتھ کیئر کمیشن کا عملہ مقامی ہسپتال سے رابطہ کرتا ہے اور ان عطائیوں کو تلاش کرنے کی کوشش کرتا ہے تو فوری طور پر ان کو اطلاع فراہم کردی جاتی ہے اور وہ اپنی کاروبار بند کر کے رفو چکر ہوجاتے ہیں ،
عطائیت کا سب سے بڑا نیٹ ورک راجن پور کے محلقہ علاقہ مرغائی ، عاقل پور ، بیٹ سونترہ ، بیٹ آرائیں اورنوشہرہ شرقی اس کے گردونواح میں موجود ہے یہاں پر موجود جعلی ڈاکٹروں نے اپنا کاروبار چمکارکھا ہے وہاں پر موجود سرکاری ہسپتال میں دوائیاں ناپید ہونے کی وجہ سے مریض ان جعلی ڈاکٹروں کے پاس جانے پر مجبور ہیں اور یہاں پر موجود عطائیوں کوکئی بار سزائیں بھی ہوچکی ہیں لیکن یہ ٹس سے مس نہیں ہوتے اور عوام کا خون نچوڑنے میں اپنا مکروہ دھندہ چمکایا ہوا ہے ،
ہماری محکمہ پنجاب ہیلتھ کیئر کمیشن سے مطالبہ ہے کہ ان کا خفیہ طور پر مریض بن کا ڈیٹا لیا جائے اور ان کے خلاف سخت سے سخت کاروائی عمل میں لائی جائے اور قانون کے مطابق ان کو سزادیا جانا قرین انصاف ہوگا،

رابطہ نمبر : 03336444089

ہماری خبر پر نوٹس والے اداروں سے گزارش ہے کہ یہ ابتدائی معلومات اور تجزیہ کے طور پر اطلاع فراہم کرنا ہم اپنا فرض سمجھتے ہیں ، اس پر ایکشن لینے سے پہلے ہمارے قوانین اور پرائیوسی پالیسی کو ضرور پڑھ لیں ،مزید معلومات کے لیےدیئے گئے نمبر پر رابطہ کریں ، شکریہ

اپنا تبصرہ بھیجیں