فاضل پور دیہی مرکز صحت میں کرپشن کا انکشاف ، انچارج نے فنڈ ہڑپ کرنے کی نئی ترکیب نکال لی،

previous arrow
next arrow
ArrowArrow
Slider

فاضل پور ( نمائندہ آواز 92) گزشتہ دنوں پنجاب ہیلتھ اتھارٹی لاہور نے فاضل پور میں لگے واٹر کولر سے آنیوالے پانی کا ثی ڈی ایس چیک کیا تو وہ مضر صحت نکلا ، اس کے بعد واٹر فلٹریشن کا معائنہ کیا گیا تو وہ بھی صحیح کام نہیں کر رہا تھا ، اس پر پنجاب ہیلتھ اتھارٹی لاہور نے فوری طور پر اسکو سیل کردیا اور اس کے سیمپل ٹیسٹنگ کے لیے لاہور بھیج دیئے ، چنانچہ ذرائع کے مطابق یہ واٹر فلٹریشن ڈیوائس 15 فروری کو بل نمبر 480 کے ذریعے لوکل پرچیز کمیٹی کے ذری‏عے خریدی گئی ، ذرائع نے یہ بھی بتایا کہ فاضل پور دیہی مرکز صحت کے ساتھ واٹر فلٹریشن کا بڑا آر او پلانٹ لگ رہا ہے ، پھر سمجھ سے بالا تر ہے کہ پھر کیونکہ ضرورت محسوس ہوئی اس واٹر فلٹریشن ڈیوائس کی ، بعد ازاں عنصر مستوئی اکاونٹنٹ سے جب معلوم کیا کہ اس واٹر فلٹر ڈیوائس کو کب خریدا گیا تو سن کر عقل دنگ رہ گئی کہ صرف چند دن پہلے خریدا گیا واٹر فلٹر ڈیوائس اس وقت کام چھوڑ گیا ، اس پر جب یہ دیکھا کہ اس کی کل قیمت 15 ہزار روپے کا بل بنا ہوا تھا ، لیکن اس وقت مارکیٹ میں اس کی قیمت صرف پانچ ہزار روپے ہے تو موجودہ میڈیکل آفیسر انچارج فاضل پور دیہی مرکز صحت کی عیاری عیاں ہوگئی کہ کیا ضرورت تھی ؟ بھی سمجھ میں آگیا ،
ڈاکٹر غلام قاسم سے دریافت کیا گیا تو انہوں نے جواب دینے سے انکار کردیا اور کہا کہ لوکل پرچیز کمیٹی اس کی ذمہ دار ہے انہوں کی مشاورت سے خریدا ہے ،
اس وقت سوچنے کی بات یہ ہے کہ فاضل پور دیہی مرکز صحت میں پینے کے پانی کی سہولت کے لیے صرف ایک نلکا لگا ہوا ہے اس کے علاوہ کچھ بھی نہیں وزیر اعلی پنجاب میاں شہباز شریف سے اہلیان علاقہ کا سوال ہے کہ اس طرح کی سرعام کرپشن کے تدارک کے لیے ذمہ داران کو قراو واقعی سزا دی جانا قرین انصاف ہے ،

رابطہ نمبر : 03336444089

ہماری خبر پر نوٹس والے اداروں سے گزارش ہے کہ یہ ابتدائی معلومات اور تجزیہ کے طور پر اطلاع فراہم کرنا ہم اپنا فرض سمجھتے ہیں ، اس پر ایکشن لینے سے پہلے ہمارے قوانین اور پرائیوسی پالیسی کو ضرور پڑھ لیں ،مزید معلومات کے لیےدیئے گئے نمبر پر رابطہ کریں ، شکریہ

اپنا تبصرہ بھیجیں